امداد کن یا غوث اعظم Read Count : 22

Category : Poems

Sub Category : N/A
امداد کن امداد کن بندہ محتاج یا غوث اعظم
مرض عصیاں نے ہے گھیرا کرو علاج یا غوث اعظم

وائے نادانی کے گزرے ہیں دن یارانِ غفلتاں میں 
ہو کند ذہنی سی آذادی ، امداد کن یا غوث اعظم

تیرے توصل ہی جھیلی ہیں شیطانا خواریاں 
جا بھاگ جا ، دل میں ہیں میرے ہا غوث اعظم

منتظر دیدار ہوں،دم روکا ہے آنکھوں میں میں نے
ہےیہ عقیدہ میرا آؤ گےمیرےخواب میں تم یاغوث اعظم

تیری طرف آ رہا ہے، کرتا ہوں تیری سپرد میں 
ماجد کو تیرے ،سنبھالو  تمہی یا غوث اعظم 

Comments

  • No Comments
Log Out?

Are you sure you want to log out?